پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنما سینیٹر رحمان ملک نے کہا ہے کہ یہ ہماری خارجہ پالیسی کی ناکامی ہے کہ کشمیر میں ایک ماہ سے جاری کرفیو کا دنیا کو پتہ ہی نہیں، بھارتی وزیراعظم جنگی مجرم ہے، ہمیں دنیا کو نریندر مودی کا یزیدی چہرہ دکھانا ہوگا۔

سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ کے چئیرمین اور پاکستان پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنما سینیٹر رحمان ملک نے اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ فاشسٹ مودی نے معصوم کشمیریوں کو گھروں میں محصور کرکے پانی، ادویات و اشیائے خوردونوش بند کئے ہوئے ہیں، ہمیں چاہئے کہ ہم دنیا کو مودی کا یہ فاشسٹ چہرہ دکھائیں۔

انہوں نے کہا کہ دنیا بھارتی وزیراعظم مودی کو ایوارڈز دے رہی ہے اور ہم خاموش بیٹھے ہیں، وزیراعظم عمران خان کو چاہیے کہ وہ دنیا کے تمام ممالک کے سربراہان و صدور کو خط لکھیں۔

رحمان ملک نے کہا کہ جب وہ بیلاروس کانفرنس میں شرکت کرنے گئے تو وہاں انہیں افسوس ہوا کہ بہت سے ممالک کو کشمیر کے مسئلے کا پتہ ہی نہیں تھا، یہ سراسر ہماری خارجہ پالیسی کی ناکامی کے زمرے میں آتا ہے کہ ایک ماہ سے مقبوضہ کشمیر میں کرفیو نافذ ہے اور دنیا کو اس بارے علم بھی نہیں۔

رحمان ملک کا کہنا تھا کہ مودی کشمیر کو ہڑپ نہیں کرسکتا، کشمیریوں کو بھارتی مظالم سے جلد آزادی ملے گی۔ مودی جنگی مجرم ہے اور حکومت پاکستان کو اس حوالے سے انٹرنیشنل کرمنل کورٹ میں جانا چاہیے۔

رحمان ملک بھارت کو تنبیہہ کی کہ وہ ہوش سے کام لے، اگر جہادی تنظیموں نے کشمیر میں جہاد کا اعلان کردیا تو مشکلات ہونگی، اگر جہادی کشمیر کی طرف چل پڑے تو نہ صرف خطے بلکہ پوری دنیا کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔