پاکستان کرکٹ ٹیم کے کپتان سرفراز احمد نے کہا ہے کہ بابر اعظم کو ٹیم کا نائب کپتان بنانے کا فیصلہ بالکل درست ہے، بابر انکے ساتھ سلپ میں فیلڈنگ کرتے ہیں لہٰذا ان کے ساتھ اچھی پم آہنگی ہے، وہ پہلے بھی اکثر اوقات بابر اعظم سے ہی مشورہ کرتے تھے۔

سرفراز احمد کراچی میں میڈیا سے گفتگو کر رہے تھے، انکا کہنا تھاکہ ورلڈ کپ کے اختتام کے ساتھ ہی انکی کپتانی کی مدت ختم ہو گئی تھی لیکن وہ اس حوالے سے مطمئن تھے کہ جو ہوگا اچھا ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ سب سے اہم بات کپتانی کے دوران بورڈ کے ساتھ بہتر روابط ہوتی ہے اور وہ جب پہلے کپتان تھے تو بھی بورڈ انکی مسلسل حوصلہ افزائی کرتا رہا ہے۔ یہ بورڈ کا اختیار ہے کہ وہ کس کو ٹیم کا کپتان مقرر کرتا ہے، ابھی انہیں وائیٹ بال کی کپتانی ملی ہے اور بورڈ پہ منحصر ہے کہ وہ ٹیسٹ ٹیم کے لئے کسے کپتان منتخب کرتا ہے۔

ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے سرفراز احمد کا کہنا تھا کہ دو اہم فاسٹ بولرز کی طویل مدت کی کرکٹ سے کنارہ کشی کے بعد اب دیکھنا ہوگا کہ وکٹ ٹیکنگ بولرز کون ہیں، یاسر شاہ کے ساتھ بھی ایک سپورٹنگ اسپنر کو ٹیم میں شامل کرنا ہوگا۔

سرفراز احمد نے کہا کہ انکی کوشش ہوگی کہ سری لنکا کے خلاف آنے والی سیریز میں بطور ٹیم بہتر پرفارمنس دی جائے اور اس سیریز کے لئے بہترین ٹیم میدان میں اتاری جائے۔