وزیراعظم مسلسل این آر او نہ دینے پر بضد ہیں جبکہ انہی کی کابینہ کے اہم وزیر برائے ریلوے شیخ رشید احمد فرماتے ہیں کہ معاملات طے پا رہے ہیں

وہ لاہور میں پریس کانفرنس کر رہے تھے، انہون نے کہا کہ لوگ یہ اچھی طرح جان لیں کہ معاملات طے پا رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کیا دو ماہ سے کسی نے نواز شریف کی صحت کی خرابی بارے سنا ہے یا یہ سنا ہے کہ وہ باہر جا رہے ہیں؟ شہباز شریف تو میری پارٹی کا بندہ ہے، وہ معاملات سدھارنا چاہتا ہے لیکن نواز شریف اپنی ضد اور انا کی وجہ سے معاملات کو خراب کر دیتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ جو لوگ لندن سے کالیں کر رہے ہیں انہیں یہاں بھی بلایا جا سکتا ہے لیکن بات چیت چل رہی ہے، معاملات کو خراب نہیں کرنا چاہتا۔

آصف علی زرداری نے بارے سوال کا جواب دیتے ہوئے شیخ رشید نے کہا کہ وہ کھلے دل کا بندہ ہے، وہ لوگوں کو کھلاتا ہے، اس کے لوگ پیسہ واپس کر رہے ہیں، شریف برادران کنجوس ہیں وہ اپنوں میں ہی پیسہ بانٹتے ہیں۔

مولانا فضل الرحمان کے لاک ڈاون بارے انکا کہنا تھا کہ وہ ناموس رسالت کے نام پر لوگوں کو اکٹھا کر رہے ہیں، پیپلز پارٹی نے تو ان کے ساتھ شمولیت پر انکار کر دیا ہے، مذہبی کارڈ کے لئے ن لیگ بھی ان کے ساتھ شامل نہیں ہو گی۔

انہوں نے کہا کہ وہ مولانا عبدالغفور حیدری کے ذریعے مولانا فضل الرحمان کو پیغام پہنچا چکے ہیں کہ خدارا گرم جگہ پاوں نہ رکھیں۔

واضح رہے کہ وزیراعظم عمران خان مسلسل یہی بیان دے رہے ہیں کہ وہ کبھی کسی صورت کسی کو این آر او نہیں دیں گے جبکہ ان کی کابینہ کے وزیر شیخ رشید نے آج واضح الفاظ میں بتا دیا ہے کہ معاملات حل کی طرف جا رہے ہیں۔