طب کی دنیا میں ایک اور انقلاب آ گیا ہے، ملیریا سے بچاو کی ویکسین تیار کرلی گئی ہے جس کا کام انسان کے اندر قوت مدافعت ہو بڑھانا ہوگا تاکہ وہ ملیریا کے ان جراثیم کے حملوں سے محفوظ رہ سکے جو مچھر کے کاٹنے سے پیدا ہوتے ہیں۔

فوٹو بشکریہ ڈان: مچھر کے کاٹنے سے ملیریا جیسا جان لیوا مرض پھیلتا ہے

برطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق اس نئی ویکسین کو کینیا میں متعارف کرایا جائے گا جس کی تیاری میں تقریباََ 30 سال کا ایک طویل عرٖصہ لگا ہے۔ اس ویکسین کو ملیریا کے حملوں سے بچاو کے لئے بہت مددگار پایا گیا ہےاور شدید ملیریا کے کیسز میں بھی یہ بااثر ثابت ہوئی ہے۔

یہ ویکسین بچوں کو دو سال کی عمر  تک پہنچتے ہوئے چار بار دی جائے گی، اسے بچوں کی دوسری ویکسینیشنز کی طرح عام معمولات میں شامل کیا جائے جسکے تحت آئندہ تین سال میں تقریباََ تین لاکھ بچوں کو اسکی ڈوز دی جائے گی۔

عالمی ادارہ صحت کا کہنا ہے کہ ملیریا سے ایک سال کے اندر چار لاکھ کے قریب افراد موت کا شکار ہو جاتے ہیں جن میں زیادہ تعداد بچوں کی ہوتی ہے۔

اس ویکسین کو طب کی دنیا میں ملیریا جیسے جان لیوا مرض کے خلاف ایک گیم چینجر قرار دیا گیا ہے۔