جج ارشد ملک ویڈیو اسکینڈل کیس سے متعلق سپریم کورٹ کے فیصلے پر نظر ثانی کر کے عدالتی کمیشن قائم کیا جائے، عدالت عظمی میں درخواست دائر کر دی گئی۔

نظرثانی کی درخواست ایڈووکیٹ اکرام چوہدری کی جانب سے دائر کی گئی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ جج ارشد ملک کی ویڈیو سے ایک جج نہیں بلکہ پوری عدلیہ پر حرف آیا ہے۔

درخواست میں موقف اپنایا گیا ہے کہ عدلیہ سے متعلق اس معاملے کی تحقیقات عدالتی کمیشن کو ہی کرنی چاہیں، قانون کےتحت عدالت کو کمیشن قائم کرنے اور معاملے کی تحقیقات کرنے کا اختیار حاصل ہے۔

سپریم کورٹ کی جانب سے عدلیہ اور اس کی ساکھ سے متعلق معاملہ ایف آئی اے یا کسی اور تفتیشی ادارے پر نہیں چھوڑا جا سکتا۔

درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ عدالت عظمی اپنے فیصلے پر نظر ثانی کرے اور معاملے کی تحقیقات کے بعدعدالتی کمیشن قائم کرنے کاحکم جاری کرے۔۔