پاکستان میں مہنگائی مزید بڑھنے کا خدشہ ہے، مہنگائی کی شرح 12 فیصد تک جا سکتی ہے۔

ایشیائی ترقیاتی بنک نے سالانہ آوٹ لک رپورٹ جاری کردی، رپورٹ کے مطابق پاکستان میں مہنگائی کی شرح میں 12 فیصد تک اضافے کا خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے۔ اگر حکومت اسٹیٹ بینک سے براہ راست قرض نہ لینے کی پالیسی اپنائے تو مہنگائی میں کمی کی جا سکتی ہے۔

ایشیائی ترقیاتی بینک کی رپورٹ کے مطابق رواں مالی سال کے دوران پاکستان کی معیشت دواعشاریہ آٹھ فیصدتک محدود رہے گی، بجٹ و کرنٹ اکاونٹ خساروں پر قابوپانے کی حکومتی کوششوں کی وجہ سے اقتصادی ترقی مزید کم ہوگی۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ صنعتی ترقی کا عمل سست اور موسم کی وجہ سے زرعی شعبے میں تیزی کا امکان ہے، جی ڈی پی میں ریونیو کا تناسب 16 اعشاریہ 6 فیصد تک بڑھنے کا امکان ہے جبکہ روان مالی سال کے دوران بجٹ خسارہ 7 اعشاریہ 2 فیصد تک رہنے کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے۔

رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ بجٹ خسارے کو پورا کرنے کے لئے زیادہ تر قرضہ غیرملکی ذرائع اور نان بنکنگ سیکٹر سے لیا جائے گا اور ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر حقیقی قدر کے قریب پہنچنے سے برآمدات بڑھیں گی۔