اور بالآخر بھارتی قونصلر کی جاسوسی اور دہشتگردی کے الزام میں گرفتار کلبھوشن جادھو سے ملاقات کروا دی گئی ہے۔

فائل فوٹو

دفترخارجہ کے ذرائع کا کہنا ہے کہ سب جیل میں کلبھوشن سے ملاقات بھارتی ڈپٹی ہائی کمیشنر نے کی جو تقریباََ دو گھنٹے تک جاری رہی۔

کلبھوشن کو عالمی عدالت انصاف کے فیصلے کے بعد قونصلر رسائی دینے کے حوالے سے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے گزشتہ روز میڈیا کو آگاہ کیا تھا جبکہ دوسری جانب ترجمان دفترخارجہ نے بھی کلبھوشن کو قونصلر رسائی کی خبر کی تصدیق کی تھی۔

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا اس حوالے سے کہنا تھا کہ پاکستان ویانا کنونشن کے تحت عالمی عدالت انصاف کے فیصلے کو ماننے کا پابند ہے اس لئے کلبھوشن تک قونصلر رسائی دی جائے گی۔

ان کا کہنا تھا کہ بھارت ہماری امن کی خواہش کو کمزوری نہ سمجھے، اگر بھارت کی جانب سے کوئی ایڈونچر کی کوشش کی گئی تو پاک فوج اور پاکستانی قوم بالکل تیار ہے، اسے منہ توڑ جواب دیا جائے گا۔