وزیراعظم عمران خان سے آئی ایم ایف کے وفد کی ملاقات ہوئی ہے جس میں مالیاتی پیکج کے بعد حکومتی اقدامات کے حوالے سے امور پر بات چیت کی گئی ہے، وزیراعظم نے حکومت کے معاشی اصلاحاتی اقدامات سے وفد کو آگاہ کیا۔

ملاقات میں وزیراعظم کی معاونت کے لئے مشیر خزانہ ڈاکٹر حفیظ شیخ، گورنر اسٹیٹ بینک اور سیکرٹری خزانہ موجود تھے جبکہ آئی ایم ایف کے وفد کی قیادت ڈائریکٹر مڈل ایسٹ وسٹرل ایشیاء جیہاد آزور کررہے تھے۔

اس سے قبل آئی ایم ایف کے وفد نے مشیر خزانہ ڈاکٹر حفیظ شیخ سے بھی ملاقات کی جس میں وفد کو ملک کی معاشی صورتحال اور حکومتی اقدامات کے حوالے سے بریفنگ دی گئی۔

مشیر خزانہ کا کہنا تھا کہ نجکاری کی ایکٹیو لسٹ میں مزید 10 ادارے شامل کیے گئے ہیں۔ مشیر خزانہ نے کہا کہ غیر ضروری اخراجات میں کمی اور ریونیو میں اضافہ کیا جائے گا اور موجودہ سال معاشی ترقی کے ہدف کو بھی پورا کیا جائے گا۔

آئی ایم ایف وفد کو بتایا گیا کہ کرنٹ اکاؤنٹ اور تجارتی خسارے میں کمی آرہی ہےاور موجودہ سال نان ٹیکس ریونیو کی مد میں 1000 ارب روپے حاصل ہونے کا امکان ہے۔