وزیراعظم پاکستان عمران خان نے ایک بار پھر دنیا کو خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر پاکستان اور بھارت کے مابین روایتی جنگ بھی ہوتی ہے تو اسکا اختتام ایٹمی جنگ پر ہی ہوگا جسکا انجام بہت بھیانک ہے۔

وہ قطری ٹی وی کو انٹرویو دے رہے تھے، انکا کہنا تھا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں جو مظالم جاری رکھے ہوئے ہے اگر وہاں کے عوام کی طرف سے اسکا ردعمل آتا ہے تو وہ اسکا الزام پاکستان کو دے سکتا ہے، اگر امریکی صدر ٹرمپ اس مسئلے میں سنجیدہ مداخلت کریں تو مسئلہ کشمیر کے حل کی گارنٹی دی جا سکتی ہے۔

انہوں نے  کہا کہ جب سے میں نے وزارت عظمٰی کا منصب سنبھالا ہے بارہا بھارت کو مذاکرات کی پیشکش کی ہے لیکن بھارت اس پیشکش کو پاکستان کی کمزوری اور غلط طریقے سے لے رہا ہے۔ پاکستان جنگ میں کبھی پہل نہیں کرے گا لیکن بھارت ہوش کے ناخن لے، اگر پاک بھارت روایتی جنگ بھی شروع ہوتی ہے تو اسکا اختتام ایٹمی جنگ پر ہی ہوگا جسکا انجام بہت بھیانک ہوگا۔