طالبان کا 9 رکنی وفد ملا برادر کی سربراہی میں بیجنگ پہنچا جہاں انہوں نے چین کے نمائندہ خصوصی برائے افغانستان سے ملاقات کی۔ ملاقات میں امریکا کے ساتھ ہونے والے امن مذاکرات پر بات چیت کی گئی۔

طالبان ترجمان کی ٹویٹ کا عکس

طالبان کے ترجمان سہیل شاہین نے بتایا کہ ملاقات میں چینی نمائندہ خصوصی نے کہا کہ امریکا طالبان سمجھوتہ افغان مسئلے کے پر امن حل کیلئے ایک اچھا فریم ورک ہےجس کی چین حمایت کرتا ہے۔

ملا برادر کا کہنا تھا کہ طالبان اور امریکا نے بات چیت کی اور جامع معاہدے تک پہنچ گئے، اب اگر امریکی صدر اپنا وعدہ توڑتے ہیں تو افغانستان میں کسی قسم کی خونریزی کے ذمہ دار وہی ہوں گے۔

چین کی وزارت خارجہ نے افغان وفد سے ملاقات پر ابھی کوئی ردعمل نہیں دیا۔

یاد رہے کہ افغان طالبان کے وفد نے گزشتہ دنوں روس کا دورہ کیا تھا جہاں روسی صدر صدر ولادیمیر پیوٹن کے نمائندہ خصوصی برائے افغانستان زمیر کابلوف نے طالبان وفد کی میزبانی کی تھی۔