امریکی صدر ٹرمپ کے بعد برطانوی وزیراعظم بورس جانسن نے بھی سعودی آئل تنصیبات پر حملے کا ذمہ دار ایران کو ٹھہرایا ہے۔

برطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق بورس جانسن نے ایرانی صدر روحانی سے ملاقات سے قبل اس بات کا امکان ظاہر کر دیا ہے کہ سعودی عرب کی آئل تنصیبات پر حملے میں ایران ملوث ہے۔ یہ پہلا ردعمل ہے برطانیہ کی جانب سے جب سے سعودی عرب کی آئل تنصیبات پر حملہ ہوا ہے۔

برطانوی وزیراعظم نے ایران کے خلاف فوجی مداخلے کے امکانات کو مسترد کرتے ہوئے پابندیاں نافذ کرنے کے عمل کو اختیار کرنے کا کہا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق برطانوی وزیراعظم نے جنرل اسمبلی کے اجلاس میں شرکت کے لیے نیویارک جاتے ہوئے گفتگو میں کہا کہ میں آپ کو بتاسکتا ہوں کہ برطانیہ انتہائی غالب امکانات پر سعودی آئل تنصیبات پر حملوں کو ایران سے منصوب کررہا ہے۔

مشرق وسطٰی میں جاری کشیدگی کو کم کرنے کے لئے برطانیہ امریکہ اور دیگر ممالک کے ساتھ مل کر کام کرے گا۔