جسٹس ریٹائرڈ دوست محمد خان نے نگراں وزیراعلیٰ خیبرپختون خواہ کا حلف اٹھالیا – Reporter's Diary…

جسٹس ریٹائرڈ دوست محمد خان نے نگراں وزیراعلیٰ خیبرپختون خواہ کا حلف اٹھالیا

http://orpheum-nuernberg.de/?bioede=bin%C3%A4re-optionen-100-startguthaben&830=08 جسٹس ریٹائرڈ دوست محمدخان نے نگراں وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کا حلف اٹھالیا،نگراں وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا نے کہا کہ شفاف انتخابات کی بھرپور کوشش کریں گے۔

source site  پشاور میں گورنر ہاؤس میں نگراں وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کی حلف برداری کی تقریب ہوئی ، جس میں جسٹس ریٹائرڈ دوست محمد خان نے نگراں وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا کا حلف اٹھایا، گورنر ظفر اقبال جھگڑا نے نگران وزیر اعلی سے حلف لیا۔

segnali binari it تقریب حلف براداری میں پرویز خٹک سمیت دیگر سیاسی رہنما شریک ہوئے۔

http://podzamcze-dobczyce.pl/index.php/restauracja/assets/css/assets/css/assets/js/jquery.isotope.min.js حلف برداری کے بعد میڈیا سے گفتگو میں کرتے ہوئے فاف انتخابات کی بھرپورکوشش کریں گے،نگراں وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا نے کہا کہ کہا کہ شفاف انتخابات کی بھرپور کوشش کریں گے، ایسے اقدامات کریں گے تاکہ امیدوار مطمئن رہیں، کوشش ہوگی جو فرض سونپا گیا اسے خوش اصلوبی سے سرانجام دیں۔

singles leipzig de online دوست محمد خان کا کہنا تھا کہ کوشش کریں گے عوام کو زیادہ سے زیادہ ریلیف دیں، صوبائی کابینہ میرٹ پر بنے گی،تعداد کم رکھیں گے، سابقہ حکومت نے بجٹ پاس نہیں کیا، بجٹ کے حوالے سے بھی معاملات دیکھیں گے۔ opzioni binarie in banca ۔

follow site جسٹس ریٹائرڈ دوست محمد خان 20 مارچ 1953 میں پختونخواہ کے شہر بنوں میں پیدا ہوئے۔ ابتدائی اور ثانوی تعلیم بنوں سے حاصل کی جبکہ گورنمنٹ سندھ مسلم لا کالج کراچی سے وکالت کی ڈگری حاصل کی۔

see انہوں نے امریکا اور برطانیہ سے بھی وکالت سے متعلق چند مختصر کورسز کیے۔

click here دوست محمد خان نے سنہ 1976 سے وکالت کی پریکٹس کا آغاز کیا۔ انہوں نے سیشن اور ہائی کورٹ کے ساتھ سپریم کورٹ میں بھی اپنی خدمات انجام دیں۔

source url وہ سنہ 1986 سے 87 تک ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن بنوں کے صدر بھی رہے جبکہ 1999 سے 2000 تک پشاور ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن ڈی آئی خان بینچ کے صدر بھی منتخب ہوئے۔

http://inter-actions.fr/bilobrusuy/7 نومبر 2011 میں انہیں پشاور ہائی کورٹ کا چیف جسٹس منتخب کیا گیا۔ دو سال تک اس عہدے پر رہنے کے بعد وہ سپریم کورٹ میں اپنی خدمات انجام دینے لگے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *