بجٹ میں مہنگی اور سستی ہونے والی اشیاء کی فہرست جانیئے

 نئے بجٹ میں 93 ارب 32 کروڑ روپے مالیت کے اضافی ٹیکس عائدکئےگئےہیں۔ سیلز ٹیکس،ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں 50 ارب 40 کروڑ کے ٹیکس عائد کئےگئےہیں۔ کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں 28 ارب 97 کروڑ کے ٹیکس عائد کئےگئےہیں۔ انکم ٹیکس کی مد میں 13ارب 95 کروڑروپے ٹیکس اضافہ ہواہے۔ایف بی آر کےمطابق نئےبجٹ میں ٹیکسزمیں 184ارب49کروڑ کاریلیف دیا گیاہے

سیمنٹ پر فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی بڑھاکر ڈیڑھ روپےکلو گرام کردی گئی ہے۔سیمنٹ کی فی بوری کی قیمت میں 13  روپےاضافہ ہوگا

بیرون سگریٹ پر 3964 روپے ڈیوٹی عائدکی گئی ہے۔کیٹٰگری ٹوکےسگریٹ 1770روپےڈیوٹی عائدکی گئی ہے۔

 

نئےبجٹ میں لنڈے کی اشیاء پرٹیکس میں کمی کردی گئی ہے۔ ٹیکس میں کمی سے پرانے کپڑے اور جوتےسستے ہوجائیں گے۔ کوئلے کی درآمد پرٹیکس کم کرکے4 فیصدکرنےکافیصلہ کیاگیاہے۔قرآن پاک کی طباعت والے کاغذپرسیلزٹیکس اورکسٹم ڈیوٹی پرچھوٹ ہوگی۔

ایل این جی کی درآمدپرویلیوایڈیشن پرچھوٹ دینے کا فیصلہ کیاگیاہے۔ڈیری لائف اسٹاک اور زراعت کے لیے سیلز ٹیکس کی چھوٹ رکھی گئی ہے۔نئے بجٹ میں لیپ ٹاپ اورکمپیوٹرکے پرزہ جات کو سیلزٹیکس سے اسثنی دیدیاگیاہے۔

اسٹیشنری آئٹم پرٹیکس کی شرح زیرو کردی گئی ہے۔ زراعت پولٹری اور ڈیری سیکٹرکو ریلیف دینے کا فیصلہ کیاگیاہے۔ لائیو اسٹاک کے لیے فیڈز کی برآمد پر ڈیوٹی 10 سے کم کرکے 5 فیصد کردی گئی ہے۔

کینسر کی ادویات کی درآمد پر کسٹم ڈیوٹی واپس لینے کی تجویزدی گئی ہے۔خیراتی اداروں اوراسپتالوں کی مشینری ڈیوٹی فری درآمد کی اجازت دی گئی ہے۔104 اقسام کے خام مال پرکسٹم ڈیوٹی کی شرح میں چھوٹ دینے کی تجویزدی گئی ہے۔28 قسم کےخام مال پرکسٹم ڈیوٹی کی موجودہ شرح کم کردی گئی۔ چمڑے کی مصنوعات کے لیے خام مال کی درآمد پر ڈیوٹی ختم کردی گئی ہے

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *