سانحہ ماڈل ٹاؤن کی رپورٹ عام کرنے کا حکم

 ہائیکورٹ نے سانحہ ماڈل ٹاؤن انکوائری رپورٹ منظر عام پر لانے کے فیصلے کے خلاف پنجاب حکومت کی اپیل مسترد کرتے ہوئے رپورٹ عام کرنے کا حکم دیدیا۔

لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس عابد عزیز شیخ کی سربراہی میں جسٹس شہباز رضوی اور جسٹس قاضی محمد امین احمد پر مشتمل 3 رکنی فل بینچ نے صوبائی حکومت کی انٹرا کورٹ اپیل پر سماعت مکمل کرکے 24 نومبر کو فیصلہ محفوظ کیا تھا۔

عدالت نے آج فیصلہ سناتے ہوئے پنجاب حکومت کی اپیل مسترد کردی اور سانحہ ماڈل ٹاؤن پر جسٹس باقر نجفی کمیشن کی رپورٹ 30دنوں میں عام کرنے کا حکم دیا ہے۔

عدالت نے حکم دیا کہ تحقیقاتی رپورٹ کی نقول سانحہ ماڈل ٹاؤن کے متاثرین کو بھی دی جائے جب کہ صوبائی حکومت فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ سے رجوع کرسکتی ہے۔

عدالتی حکم میں کہا گیا ہے کہ رپورٹ عام ہونے کے بعد سانحہ ماڈل ٹاؤن کے ٹرائل پر کوئی اثر انداز نہیں ہوگا، ٹرائل غیر جانبدارانہ اور شفاف انداز میں چلایا جائے گا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *