سندھ: کابینہ کے اجلاس میں دوسری بار آئی جی کو ہٹانے کی سفارش کردی گئی

سندھ کابینہ کے اجلاس میں ایک بار پھر آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ کو ہٹاکر نیا آئی جی لانے کی سفارش کردی گئی۔

وزیراعلیٰ سندھ کی زیر صدارت سندھ کابینہ کا اجلاس جاری ہے جس میں آئی جی سندھ نے بریفنگ دیتےہوئے کہا کہ ایڈیشنل آئی جی، ڈی آئی جی اور ایس ایس پی کی پوسٹنگ 2 سال کے لیے ہوتی ہے، باقی افسران کی تعیناتی کا دورانیہ ایک سال تجویز کیا ہے۔

اے ڈی خواجہ نے کہا کہ آئی جی کو پولیس افسر کے ٹرانسفر کا اختیار ہونا چاہیے جب کہ مدت سے قبل کسی افسر کا ٹرانسفر ٹھوس وجوہات پر ہی کیا جائے۔

آئی جی سندھ نے تجویز دی کہ ایس ایچ او اپر اسکول کورس کوالیفائیڈ ہونا چاہیے، ایس ایچ او کی عمر 55 سال سے زیادہ نہیں ہونی چاہیے جب کہ ایس ایچ اوز کو سب انسپکٹر یا انسپکٹر کے رینک کا ہونا چاہیے

 ترجمان وزیراعلیٰ سندھ کا کہنا تھا کہ ہائیکورٹ نے فیصلہ دیا تھا کہ آئی جی پولیس رولز بنائیں گے سندھ پولیس رولز پر کابینہ بحث کرے گی اور کابینہ پولیس رولز کو آئین کےمطابق منظور کرے گی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *