فری جمشید دستی ٹویٹر پر ٹاپ ٹرینڈ بن گیا۔

رکن قومی اسمبلی جمشید دستی جو کہ اس وقت پولیس کی زیر حراست ہے انہوں نے دوران پیشی میڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ انہیں شدید تشدد کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔وہ 6 دن سے بھوکے ہیں ۔ڈنگا کنال کھولنے کے جرم میں جمشید دستی کو ہتھکڑیاں لگا کر سرگودھا میں ایڈیشنل سیشن جج کی عدالت میں پیش کیا گیا۔اس پیشی کے دوران پولیس وین سے جمشید دستی نے روتے ہوئے پیغام ریکارڈ کروایا کہ ان پر تشدد کیا جارہا ہے۔جس سیل میں انکو رکھا گیا ہے وہاں سانپ بچھو اور چوہے موجود ہیں ۔جمشید دستی نے چیف جسٹس سے اپنی حالت زار پر نوٹس لینے کی استدعا کی۔انہوں نے مزید کہا مجھے جھوٹے مقدمات میں پھنسایا جارہا ہے۔یہ ویڈیو منظر عام پر آنے کے بعد سوشل میڈیا پر لوگوں نے اپنے غم و غصے کا اظہار کیا اور فری جمشید دستی ٹویٹر پر ٹاپ ٹرینڈ بن گیا ۔

تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے ٹویٹ کیا شریفوں کی سفاکیت شرمناک ہے سیاسی گاڈ فادر ضیا الحق کی میراث کو زندہ رکھئے ہوئے ہیں 

تحریک انصاف کے رہنما جہانگیر خان ترین نے ٹویٹ کیا کہ ن لیگ نے حیسن نواز کی کرسی پر بیٹھے تصویر پر شور مچا دیا تھا جبکہ اصل تکلیف اور تشدد جمشید دستی پر ہورہا ہے۔

معروف اینکر ارشد شریف نے ٹویٹ کرتے ہوئے کہا

چونکہ جمشید دستی غریب ہیں اس لئے ان پر جیل میں تشدد کیا جارہا ہے جبکے پانامہ کیس میں ملوث افراد کو وی وی آئی پی پروٹوکول مل رہا ہے۔

سوشل میڈیا یوز فرحان ورک نے ٹویٹ کیا کہ جمشید دستی نے صرف عوام کے لئے پانی حاصل کرنے لئے سب کچھ کیا تھا اور انہیں جیل میں بچھو اور چوہوں کے ساتھ بند کردیا گیا۔

انجم اقبال نے ٹویٹ کیا اور کہا جمشید دستی وہ واحد غریب بندہ ہے جو پارلیمنٹ میں موجود ہے اور اسکا گناہ صرف طاقت روں کے خلاف بولنا ہے۔

اسلام آباد سے تعلق رکھنے والے بلاگر ڈاکٹر نبیل علوی نے کہا سب کے لئے ایک جیسے رائیٹس ہونے چاہیں ایک غریب ایم این اے حوالات میں ہے اور بہت سے کرپٹ لوگ آزاد پھر رہے ہیں ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *