جے آئی ٹی نے حسین نواز کو پھر طلب کرلیا

جے آئی ٹی کا حسین نواز کو سمن۔
پانامہ کیس کی تحقیقات کرنے والی جے آئی ٹی نے وزیر اعظم پاکستان نواز شریف کے صاحبزادے حسین نواز کو کل صبح گیارہ بجے دوبارہ طلب کرلیا ہے۔
سمن کے مطابق حسین نواز جے آئی ٹی سے تعاون نہیں کیا۔اس لئے انصاف کے تقاضے پورے کرنے کے لئے انہیں 30 مئی 2017 کو صبح 11 بجے جوڈیشل اکیڈمی اسلام آباد طلب کیا جاتا ہے۔سمن کے مطابق پہلی پیشی میں حسین نواز شریف نے کسی سوال کا جواب نہیں دیا اور وہ بغیر کسی ریکارڈ کے آئے تھے۔لہذا ان کو ہدایت کی جاتی ہے سوالات سے متعلق تمام دستاویزات ساتھ لئے کر آئیں۔

وزیر اعظم نواز شریف کے صاحبزادے حسین نواز سے اتوار کے روز 2 گھنٹے تک پوچھ گچھ کی گئ۔حسین نواز نے جے آئی ٹی کے دو ارکان جن میں اسٹیٹ بینک کے نمائندے عامر عزیز اور سیکورٹی ایکسچینج کمیشن کے نمائندہ بلال رسول شامل ہیں ان پر تحفظات کا اظہار کیا تھا ۔

پیر کے روز سپریم کورٹ نے پانامہ لیکس کی تحقیقات کرنے والی جے آئی ٹی کے ممبر کو تبدیل کرنے کی حسین نواز کی درخواست کو مسترد کردیا عدالت نے ریمارکس دئے کسی ٹھوس ثبوت کے بغیر  جے آئی ٹی کا کوئی رکن تبدیل نہیں ہوگا، شکوک کی بنیاد پر کسی کو جے آئی ٹی سے نہیں نکالا جاسکتا،اگر ایسا کیا گیا تو تحقیقات کے لئے آسمان سے فرشتے بلانے پڑیں گے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *