پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) میں یومِ شہدا و دفاع 2019 سے متعلق کانفرنس ہوئی جس میں میجر جنرل آصف غفور نے تقریب کے فارمیٹ سے متعلق آگاہ کیا۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے بتایا کہ یومِ دفاع و شہدا کی تقریب کے فارمیٹ میں تبدیلی کی گئی ہے، اس بار جی ایچ کیو میں شام کے وقت مرکزی تقریب نہیں ہو گی بلکہ تقریب کو دن کے وقت رکھا گیا ہے جس میں صرف شہدا کے لواحقین اور غازی شرکت کریں گے، آرمی چیف شہدا کے لواحقین اور غازیوں سے ملاقات کریں گے جب کہ آرمی چیف جی ایچ کیو میں یاد گارِ شہدا پر حاضری دیں گے اور پھول رکھیں گے۔

میجر جنرل آصف غفور نے مزید بتایا کہ اسی طرح فارمیشن اور شہر شہر تقریبات ہوں گی، یومِ دفاع کی مناسبت سے چھاؤنیوں میں ہتھیاروں کی نمائش ہوگی۔

ترجمان پاک فوج کا کہنا تھا کہ عوام سے درخواست ہے شہیدوں کے لواحقین سے ملیں اور ان کا شکریہ ادا کریں، گلی گلی محلے محلے شہیدوں کی تصاویر آویزاں کی جائیں، عظیم قومیں اپنے شہیدوں کو یاد رکھتی ہیں۔

فائل فوٹو: ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور

انہوں نے کہا کہ اس سال بھی ہر شہید کے گھر پہنچیں گے، پچھلے سال کی طرح عوامی مقامات پر شہیدوں کی تصاویر لگائی جائیں گی، شہید کی گلی، محلے، گاؤں اور شہر میں اُن کی تصاویر لگائی جائیں گی۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے بتایا کہ ’کشمیر بنے گا پاکستان‘ تقریبات کا حصہ ہو گا۔

میجر جنرل آصف غفور نے وزیراعظم کے اعلان کردہ ’کشمیر آور‘ کے سلسلے میں بات کرتے ہوئے بتایا کہ حکومت کے اعلان کے مطابق 12 بجے ملک بھر میں سائرن بجائے جائیں گے، 12 بجے قومی ترانہ اور کشمیر کا ترانہ بجایا جائے گا، پوری قوم اپنے اپنے علاقے اور کام کی جگہ اکٹھی ہو گی، کشمیریوں کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کیا جائے گا، ملکی ہیرو، شوبز اور میڈیا کے نمائندے اور میڈیا بھرپور شرکت کرے گا۔