پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین اور سابق صدر آصف علی زرداری کا کہنا ہے کہ نواز شریف نے مجھے اسٹیبلشمنٹ سے لڑوا کر خود ہاتھ ملایا، اینٹ سے اینٹ بجانے والا بیان نواز شریف کی چال میں آ کر دیا تھا۔ مشرف کے مواخذے کا اعلان کیا تو نواز شریف پیچھے ہٹ گئے مزید کہا کہ ہم سیاست اور نواز شریف تجارت کر رہے ہیں ۔

سابق صدر آصف زرداری نے سینئر قائدین کے سامنے اپنے اور سابق وزیر اعظم نواز شریف کے درمیان اختلافات کی وجہ بتا دی۔

سابق صدر آصف علی زرداری کا کہنا ہے کہ نواز شریف نے مجھے اسٹیبلشمنٹ سے لڑوا کر خود ہاتھ ملایا۔ مشرف کے مواخذے کا اعلان کیا تو نواز شریف پیچھے ہٹ گئے۔ مشرف کو جانے نہ دینے کا کہا تو نواز شریف نے باہر بھجوا دیا۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف نے یقین دلایا تھا مشرف کو جانے نہیں دیں گے۔ نواز شریف نے مشرف پر غداری کا مقدمہ بنایا تو ساتھ دیا۔ نواز شریف یقین دلوانے سے پہلے مشرف سے ڈیل کر چکے تھے۔

زرداری کا کہنا تھا کہ اینٹ سے اینٹ بجانے والا بیان نواز شریف کی چال میں آ کر دیا تھا۔ میرے بیان کا فائدہ لے کر نواز شریف نے معاملات سیدھے کیے۔ سندھ میں نیب کی کارروائیاں نواز شریف کے کہنے پر ہوئیں۔ ’نواز شریف اپنے قریبی افسر کے ذریعے مجھے بہکاتے رہے‘۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف کو جتنا بھولا سمجھتے تھے اس سے زیادہ چالاک ہیں۔ جمہوریت کی بالا دستی کے لیے نواز شریف کی ہاں میں ہاں ملاتے رہے۔ ’ہم سیاست اور نواز شریف تجارت کرتے رہے‘۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف نے ہمیں ہر موقع پر بیچا اور ہم دھوکے میں آئے۔ سیاست سے ہٹ کر نواز شریف سے تعلقات رکھنا چاہتے تھے، نواز شریف نے میری نیک نیتی کا فائدہ اٹھایا۔ ’نواز شریف اب بھگتیں، کسی صورت ہاتھ نہیں ملاؤں گا‘۔