کراچی میں مضر صحت کھانا کھانے سے جاں بحق ہونے والے 5 بچوں کو نماز جنازہ کے بعد پشین میں سپرد خاک کردیا گیا جبکہ بچوں کی پھوپھو  بھی چل بسی  اور والدہ زیر علاج ہے، والدفیصل زمان کا کہنا ہے کہیں غفلت ہوئی تو پردہ نہ ڈالا جائے۔

تفصیلات کے مطابق کراچی میں فوڈپوائزننگ سے جاں بحق ہونے والے پانچوں بچوں کی نمازجنازہ خانوزئی عیدگاہ پشین میں ادا کی گئی، نمازجنازہ میں صوبائی وزرا، ارکان اسمبلی، سیاسی رہنما اور شہریوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی جبکہ شہریوں کی بڑی تعداد نمازجنازہ میں شریک ہوئی۔

نماز جنازہ کے بعد پشین میں مقامی قبرستان میں تدفین کردی گئی۔

دوسری جانب کراچی میں زیرعلاج بچوں کی پھوپھوبھی دم توڑ گئیں، اٹھائیس سالہ بینا کی میت بھی آبائی علاقے روانہ کردی گئی ہے۔

مضر صحت کھانےسے5 بچوں سمیت 6افرادکی ہلاکت کے معاملے پر بنائی گئی تحقیقاتی ٹیم نےکام شروع کردیا، ،تفتیشی ٹیم نے قصرنازانتظامیہ سے ڈیوٹی چارٹ اور کیڑے مارنے والی دوائی کےمتعلق تفصیلات بھی طلب کرلیا ہے۔

تفتیشی ٹیم کے مطابق کمرے سے بریانی کے دو خالی باکسز ملے تھے، دونوں باکسز اسٹوڈنٹ بریانی سے منگوائےگئے تھے، فیصل زمان اپنی فیملی کے لیے دو ڈبل بریانی کے باکس خرید کر لایا تھا،ایک باکس ایچ ای جے کراچی یونیورسٹی اور ایک باکس ایس جی ایس کورنگی بھجوا دیئے ہیں۔