ویب ڈیسک: آج وزیر اعظم عمران خان کے دو معاونین اپنے عہدوں سے مستعفی ہو گئے اور اپنے استعفے وزیر اعظم عمران خان کو پیش کر دیے۔

جن معاونین خصوصی نے استعفے دیے ان میں تانیہ ادروس اور معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا شامل ہیں۔

۔ ڈاکٹر ظفر مرزا نے اپنے ٹویٹ میں لکھا کہ وہ وزیر اعظم کی دعوت پر پاکستان آئے اور معاونین کےکردار کے بارے میں ہونے والی منفی بحث کے باعث استعفیٰ دے رہا ہوں۔

انہوں نے مزید لکھا کہ وہ یسے وقت میں اپنے عہدے سے استعفیٰ دے رہے ہیں جب پاکستان میں کورونا کے کیسز کم ہوتے جا رہے ہیں۔

مگر ذرائع کے مطابق ڈاکٹر ظفر مرزا نے استعفیٰ دیا نہیں ان سے استعفیٰ لیا گیا ہے اور  اسکی کئی وجوہات بتائی جا رہی ہیں۔ ذرائع کے مطابق ڈاکٹر ظفر مرزا  ادویات کی قیمتوں پر قابو پانے میں ناکام رہے اور اسی وجہ سے ان پر ایک انکوائری بھی شروع ہے۔

ذرائع کے مطابق ڈاکٹر ظفر مرزا کو کورونا وائرس پر قابو پانے کے لیے جو ٹاسک دیے گئے اسے پورا کرنے میں بھی ناکام رہے اور ڈاکٹر فیصل اور وفاقی وزیر اسد عمر فرنٹ لائن پر کورونا وائرس کے خلاف لڑتے رہے۔