سپریم کورٹ نے قصور میں زیادتی کے بعد قتل کی جانے والی سات سالہ بچی زینب کے کیس میں مجرم پر الزامات سے متعلق نجی ٹی وی اینکرڈاکٹر شاہد مسعود کا جواب مسترد کردیا۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ معافی کا وقت گزر گیا۔ قانون کے مطابق کارروائی ہوگی۔

چیف جسٹس کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 3 رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی۔ سپریم کورٹ نے زینب قتل کیس میں مجرم عمران کے غیرملکی بینک اکاؤنٹس کا دعویٰ کرنے والے شاہد مسعود کی جانب سے ندامت پرمبنی جواب مسترد کردیا ۔

سماعت کے دوران شاہد مسعود کے وکیل شاہ خاور نے کہا کہ اگر توہین عدالت کا مقدمہ ہے تو شاہد مسعود عدالت میں غیر مشروط معافی مانگنا چاہتے ہیں۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ معافی کا وقت گزرگیا ، شاہدمسعود کیخلاف قانون کے مطابق کارروائی ہوگی۔ چینل کتنے دن تک بند ہو سکتا ہے، شاہد مسعود پر کتنے دن کیلئے پابندی عائد کی جا سکتی ہے۔ تمام حالات کا جائزہ لیں گے۔

جسٹس ثاقب نثارنے مزید کہا کہ دیکھنا ہوگا کہ عدالت میں غلط بیانی پر دہشتگردی ایکٹ لگانا ہے یا نہیں۔ پیمرا قانون کا بھی جائزہ لیا جائے گا ۔ اچھا فیصلہ کرنا چاہتے ہیں ۔جسٹس عمر عطاء بندیال نے ریمارکس دیے کہ معاملہ سزا اور جزا کا نہیں قانون کی تشریح کا ہے۔