ان خیالات کا اظہار پاکستان کے دورے پر آئے چین کے سینٹرل ملٹری کمیشن (سی ایم سی) کے وائس چیئرمین جنرل ژو کلیانگ نے کیا جنہوں نے وزیراعظم پاکستان جناب عمران خان، صدر مملکت عارف علوی اور پاکستان کی عسکری قیادت سے الگ الگ ملاقاتیں کیں۔ 

چینی جنرل کی وفد کے ہمراہ وزیراعظم سے ملاقات

وزیراعظم ہاؤس کے اعلامیے کے مطابق وزیراعظم عمران خان سے چین کے سینٹرل ملٹری کمیشن کے وائس چیئرمین نے ملاقات کی جس میں اہم دو طرفہ امور اور خطے کی جیو اسٹریٹجک صورتحال پر گفتگو کی گئی۔ وفود کی سطح پر مذاکرات میں وفاقی وزراء اور مسلح افواج کے اعلیٰ افسران نے بھی شرکت کی۔ ملاقات میں وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ پاک چین بےمثال اسٹریٹیجک باہمی شراکت خطے میں امن و استحکام کا ستون ہے۔

اعلامیے میں بتایا گیا کہ ملاقات میں وزیراعظم نے 5 اگست کے بھارتی یکطرفہ اور غیرقانونی اقدامات، مقبوضہ کشمیر میں جاری لاک ڈاون، انسانی حقوق اور انسانی المیے کی صورتحال کو اجاگر کیا۔ وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ بھارتی اقدامات امن اور سیکیورٹی کیلئے خطرہ ہیں، بھارت اپنے جرائم سے دنیا کی توجہ ہٹانے کیلئے جھوٹے حملےکا ڈرامہ کرسکتا ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں فوری طور پر کرفیو ہٹایا جانا چاہیے اور بین الاقوامی انسانی حقوق کی تنظیموں کوجانے کی اجازت ملنی چاہیے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی تنظیموں کو انسانی المیے کا جائزہ لینے دینا چاہئے۔

اس سے قبل چینی جنرل نے صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی سے بھی ملاقات کی۔

چینی وفد کی صدر مملکت سے ملاقات

ایوان صدر سے جاری اعلامئے کے مطابق صدر مملکت کا کہنا تھا کہ پاکستان چین کے ساتھ دفاعی تعاون کو بہت اہمیت دیتا ہے، چین کی طرف سے قومی سلامتی کے امور پر پاکستان کی حمایت انتہائی اہم ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان چین کے ساتھ ہر آزمائش میں پورا اترنے والی منفرد دوستی کو قدر سے دیکھتا ہے، چین کی جانب سے تمام اہم عالمی فورمز پر پاکستان کی حمایت قابل قدر ہے۔

صدر مملکت کا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی غیر قانونی اقدام کے خلاف سلامتی کونسل میں پاکستان کی حمایت کو قدر سے دیکھتے ہیں۔ ترجمان کے مطابق جنرل ژو کیانگ نے پاکستان کی حمایت جاری رکھنے کی یقین دہانی کرائی ہے۔

آرمی چیف سے چین کے وائس چیئرمین سینٹرل ملٹری کمیشن کی ملاقات

واضح رہے کہ گزشتہ روز چین کے سینٹرل ملٹری کمیشن کے وائس چیئرمین جنرل ژو کلیانگ نے وفد کے ہمراہ جنرل ہیڈکوارٹرز (جی ایچ کیو) راولپنڈی کا دورہ کیا تھا۔

آئی ایس پی آر نے بتایا کہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے چین کے وائس چیئرمین سینٹرل ملٹری کمیشن نے ون آن ون اور وفود کی سطح پر ملاقات کی تھی۔ ملاقات میں پاکستان اور چین کے درمیان دفاعی اشتراک بڑھانے اور مقبوضہ جموں و کشمیر کی صورتحال پر بالخصوص تبادلہ خیال کیا گیا۔

آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے چین کے کردار کو سراہتے ہوئے کہا کہ عالمی فورمز پر کشمیر سمیت تمام ایشوز پر چین کی حمایت قابل تحسین ہے۔ اس دوران  چینی جنرل کا کہنا تھا کہ چین پاکستان اور اس کی فوج کے ساتھ اپنے آزمودہ تعلقات کو بہت اہمیت دیتا ہے، اور ان تعلقات کو مزید مضبوط بنانے کا خواہشمند ہے۔