الیکشن کمیشن نے پرویز مشرف کا نام پارٹی صدارت سے ہٹانے کا فیصلہ کرلیا  جبکہ پرویزمشرف  اے پی ایم ایل کی سربراہی سے مستعفیٰ ہوگئے اور  الیکشن کمیشن کو اپنا استعفیٰ بھجوا دیا۔

الیکشن کمیشن آف پاکسستان نے پرویز مشرف کا نام پارٹی صدارت سے ہٹانے کا فیصلہ کرلیا، پرویزمشرف کی نااہلی کے باعث فیصلہ کیا گیا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ پرویزمشرف نے الیکشن کمیشن کو اپنا استعفیٰ بھیج دیا، پرویزمشرف کی نااہلی پارٹی رجسٹریشن کی راہ میں رکاوٹ تھی، نااہلی کے باعث پرویزمشرف پارٹی کے سربراہ نہیں رہ سکتے۔

سپریم کورٹ نے حکم جاری کیا تھا اور پرویز مشرف کو مہلت دیتے ہوئے کہا تھا کہ اگر وہ عدالت میں پیش ہوجاتے ہیں تو انہیں گرفتار نہیں کیا جائے گا اور الیکشن کمیشن میں ان کی نامزدگی کے کاغذات وصول کر لیے جائیں گے۔

جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیئے تھے کہ مشرف کمانڈو ہیں تو پاکستان آکر دکھائیں اور سیاستدانوں کی طرح میں آرہا ہوں کی گردان مت کریں، مشرف نہ آئے تو کاغذات کی جانچ پڑتال نہیں ہونے دیں گے۔

جس کے بعد سپریم کورٹ نے 14 جون کو عدم حاضری پر پرویز مشرف کے کاغذات نامزدگی جمع کرانے کا عبوری حکم واپس لیتے ہوئے سماعت غیر معینہ مدت تک کے لیے ملتوی کردی تھی۔