لاہور کے ناصر باغ میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر طاہرالقادری کا کہنا تھا کہ پاکستان میں کمزور کو انصاف نہیں ملتا لیکن سپریم کورٹ کے فیصلے سے امید کی کرن روشن ہوئی ہے، پاناما کیس کے فیصلے سے چور پکڑا گیا اور اب سانحہ ماڈل ٹاؤن کے قاتل کی باری ہے۔ سانحہ ماڈل ٹاؤن کے کیس میں سمن جاری ہوئے لیکن ایک کو بھی جیل نہیں بھیجا، سپریم کورٹ پاناما کیس کی تحقیقات کرنے والی جے آئی ٹی کو ماڈل ٹاؤن کا کیس دے دے تو اصل قاتل کا پتا چل جائے گا۔

ڈاکٹر طاہرالقادری نے مطالبہ کیا کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن سے متعلق جسٹس نجفی کمیشن کی رپورٹ منظر عام پر لائی جائے، ماڈل ٹاؤن میں جولوگ شہید اور زخمی کیے گئے ان کاقصور کیا تھا, ہمارے کیس میں 126 ملزمان کو سمن جاری ہوئے لیکن ایک بھی جیل نہیں گیا۔

ڈاکٹر طاہرالقادری نے کہا کہ نواز شریف وہ شخص ہیں جن کے خلاف 90 کی دہائی میں فیصلہ آنے والا تھا تو انہوں نے سپریم کورٹ پر حملہ کروایا لیکن اب سپریم کورٹ کے فیصلے میں واضح لکھا کہ یہ جھوٹا اور بددیانت شخص ہے