وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے ہفتہ کو پاک فضائیہ کی

ایئر بیس سرگودھا کا دورہ کیا۔ پاک فضائیہ کے سربراہ ایئر چیف مارشل سہیل امان نے وزیر اعظم کا استقبال کیا۔ وزیر اعظم نے نئے قائم کئے گئے ایئر پاور سینٹر آف ایکسیلینس(اے سی ای) کا بھی دورہ کیا۔ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے ایف۔16طیارہ کے تربیتی فضائی مشن میں بھی حصہ لیا جبکہ ایئر چیف مارشل سہیل امان نے بھی دوسرے ایف۔16طیارے کے ذریعے فضائی مشن میں حصہ لیا۔ پاکستان کی تاریخ میں کسی وزیر اعظم کا فضائی مشن میں حصہ لینے کا یہ پہلا موقع ہے۔ مشن سے واپسی پر وزیر اعظم نے فضائی اور زمینی عملے سے تبادلہ خیال کرتے ہوئے مادر وطن کے دفاع کیلئے جوانوں کے جذبے کو سراہا اورآپریشنل تیاریوں پر اطمینان کا اظہار کیا۔ قبل ازیں وزیر اعظم کو پاک فضائیہ کی آپریشنل تیاریوں کے ساتھ ساتھ دیگر خدمات کے بارے میں بھی بریفنگ دی گئی۔ وزیر اعظم کو آگاہ کیا گیا کہ اے سی ای ایک مثالی ادارہ ہے جوجدید ترین سہولتوں اور انفراسٹرکچر سے لیس ہے۔ پی اے ایف جوانوں کو تربیت دینے کے علاوہ اس ادارے میں دوست ممالک کی ایئر فورسز کے جنگی عملے کو تربیت دی جائیگی۔ وزیر اعظم کو بتایا گیا کہ پاکستان کی پہلی کثیر الملکی فضائی مشقیں رواں سال اکتوبر میں ہونگی، ان مشقوں میں 19ملکوں کی فضائی افواج حصہ لیں گی۔ وزیر اعظم کو قدرتی آفات سے نٹمنے ، امدادی سرگرمیوں اور تعلیم و صحت کے شعبوں میں پاک فضائیہ کی خدمات کے بارے میں بھی آگاہ کیا گیا۔ پی اے ایف نے نوجوانوں کیلئے روز گار کے مواقع کے حصول کی غرض سے ملک بھر میں مختلف پیشہ وارانہ ادارے قائم کئے ہیں، اس کے علاوہ معیاری تعلیم کی فراہمی کیلئے ایئر یونیورسٹی اور فضائی میڈیکل کالج قائم کئے ہیں۔ وزیر اعظم نے ایوی ایشن سٹی پراجیکٹ میں گہری دلچسپی کا اظہار کیا جو کامرہ میں قائم کیا گیا ہے۔ وزیر اعظم نے ملک کی فضائی حدود کے دفاع میں پاکستان ایئر فورس کے اہم کردار کو سراہتے ہوئے دشتگردی کی لعنت کے خلاف جنگ میں بھی اس کے کردار کی تعریف کی