لاہور ہائی کورٹ نے آج منگل کو نگران وزیراعظم کے دورہ سوات پر اخراجات کی واپسی کی درخواست کی سماعت کی۔

عدالت نے وفاقی حکومت کو دوبارہ نوٹس جاری کردیے۔

دوران سماعت، وفاقی حکومت کے وکیل نے جواب داخل کرانے کے لئے مہلت کی استدعا کی۔

درخواسگذار کا موقف تھا کہ نگران وزیراعظم نے ریاستی ذمہ داری کی بجائے ذاتی امور کے لئے پروٹوکول استعمال کیا۔

انہوں نے درخواست میں کہا کہ نگران وزیراعظم نے اختیارات سے تجاوز کیا۔

انکا موقف تھا نگران وزیراعظم کے آبائی علاقے کے دورے سے قومی خزانے کو نقصان پہنچا۔ اور عدالت سے استدعا کی کہ پروٹوکول پر اضافی اخراجات واپس لینے کا حکم دیا جائے