سپریم کورٹ نےآرٹیکلون ایف کےتحت نااہلی مدت کاتعین کردیا , نااہلی تاحیات رہےگی،سپریم کورٹ نےفیصلہ سنادیا.نااہلی اس وقت تک مؤثررہےگی جب تک دوسرافیصلہ حق میں نہیں آتا
نااہل شخص اس وقت تک نااہل رہےگاجب تک فیصلہ ختم نہیں ہوجاتا.62ون ایف کےتحت نااہل قراردیاگیاشخص مستقل نااہل قرارپائےگا.62ون ایف شامل کرنےکامقصدقوم کیلئےباکردارقیادت دیناہے
نااہلی کی مدت سےمتعلق فیصلہ تمام ججزکامتفقہ ہے.فیصلہ جسٹس عمرعطابندیال کی جانب سےتحریرکیاگیاہے:فیصلےمیں جسٹس عظمت سعیدشیخ کااضافی نوٹ شامل کیاگیا ہے
عدالت نےنااہلی کی مدت سےمتعلق14فروری کوکیس کافیصلہ محفوظ کیاتھا.چیف جسٹس کی سربراہی میں5رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی تھی
نوازشریف نےکیس میں کارروائی کاحصہ بننےسےانکار کردیاتھانااہلی کی تلوارخواجہ آصف پربھی لٹک رہی ہےسپریم کورٹ کےفیصلےکےبعدخواجہ آصف کی بھی مشکلات بڑھ گئیںخواجہ آصف اقامہ کیس میں نااہل ہوئےتوتاحیات نااہلی ہوگی.اقامہ رکھنےسےمتعلق اسلام آبادہائیکورت نےبھی فیصلہ محفوظ کررکھاہے۔