اسلام آباد:اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے کہا ہے کہ مسئلہ کشمیر ایک علاقائی تنازعہ نہیں بلکہ حقِ خودارادیت کشمیری عوام کا بنیادی حق ہے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر میں طاقت کے استعمال سے تحریکِ آزادی کو دبایا جا سکتا ہے اورنا ہی اس مسئلہ پر پاکستان کے اصولی موقف کو بدلا جا سکتا ہے۔ ان خیالات کا اظہار یومِ یکجہتی کشمیر کے موقع پر اپنے پیغام میں کیاجو ہر سال کشمیری بھائیوں کے ساتھ اظہارِ یکجہتی کے لیے 5فروری کو آزادکشمیر سمیت پاکستان بھر میں منایا جاتا ہے۔
جنوبی ایشیاء اور مسئلہ کشمیر کے مستقبل کا حوالہ دیتے ہوئے اسپیکر نے کہا کہ جنوبی ایشیاء میں اس وقت تک پائیدار امن کے قیام کا خواب شرمندہ تعبیر نہیں ہو سکتاجب تک دنیا کی سب سے بڑی نام نہاد جمہوریت بھارت مقبوضہ وادی میں طاقت کے استعمال ا ور جبر و تشددکو بند نہیں کرتا۔انہوں اقوامِ متحدہ پر زور دیا کہ وہ کشمیر سے متعلق اپنی قرادادوں پر عملدرآمدکو یقینی بنائے۔
کشمیر ی عوام کی جدوجہد آزادی کے لیے پاکستان کی حمایت اور اصولی موقف کو اجاگر کرتے ہوئے اسپیکر نے کہا کہ پاکستانی حکومت اور عوام کشمیری عوام کی حقِ خودارادیت کی جد و جہد کی ہر فورم پر اخلاقی،سیاسی اورسفارتی حمایت جاری رکھیں گے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کی پارلیمنٹ مسئلہ کشمیر کے پرامن حل کے لیے پرعزم ہے اور اس سلسلہ میں پارلیمنٹ نے مسئلہ کشمیر کو اقوامِ متحدہ سیکورٹی کونسل کی قراردادوں کے مطابق حل کرنے اور مقبوضہ وادی میں بھارتی افواج کی طرف سے ہونے والے ظلم و بربریت کو روکنے کے لیے متعدد قرادادیں منظور کی ہیں۔انہوں نے کہا کہ کشمیر میں بھارت کی طرف سے طاقت کے بل بوتے پر قبضہ جدید معاشر ے کی اخلاقی اقدار اور عوام کے بنیادی حقِ خودارادیت کے منافی ہے۔
ڈپٹی اسپیکر قاسم خان سوری نے بھی اس موقع پر مسئلہ کشمیر پر پاکستان کے اصولی موقف کا اعادہ کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان مقبوصہ وادی میں کشمیری عوام کی حقِ خودارادیت کے لیے جاری جدو جہد کی ہر سطح پر اخلاقی،سیاسی اور سفارتی حمایت جاری رکھے گا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان مظلوم کشمیری عوام کی آواز ہے اور مصیبت کی ہر گھڑی میں ان کے ساتھ رہے گا۔