چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی نے پارلیمانی وفد کے ہمراہ اپنے چار روزہ سرکاری دورے پر گزشتہ رات متحدہ عرب امارات روانہ ہونا تھا۔ یو اے ای کی جانب سے بھارتی وزیراعظم مودی کو اعلیٰ سول ایوارڈ دئیے جانے کے بعد چئیرمین سینٹ نے احتجاجاَ اپنا دورہ منسوخ کر دیا ہے۔

چئیرمین سینیٹ صادق سنجرانی

چئیرمین سینیٹ کا کہنا ہے کہ مودی حکومت نے مقبوصہ کشمیر میں ظلم و بربریت کا بازار گرم کر رکھا ہے اور مقبوصہ وادی میں کرفیو نافذ کر رکھا ہے، ایسے حالات میں یو اے ای کی جانب سے مودی کو سول ایوارڈ دینے سے کشمیریوں کی دل آزاری ہوئی ہے۔

چئیرمین سینیٹ کا کہنا ہے کہ پاکستان کشمیریوں کی جدوجہد آزادی کی بھرپور حمایت کرتا ہے اور اپنی حمایت جاری رکھے گا۔ جب کشمیری بہن بھائی گزشتہ ایک ماہ سے محصور ہوں انکی حمایت کی بجائے مودی کو ایوارڈ دینا کسی طور بھی مناسب اقدام نہیں۔ یو اے ای کے ایسے اقدام سے انہیں شدید دکھ ہوا ہے، ایسے حالات میں ممکن نہیں کہ وہ یو اے ای کا دورہ کریں۔

یو اے ای نے مودی کو اعلیٰ ترین سول ایوارڈ سے نواز دیا

واضح رہے کہ چئیرمین سینیٹ کا پارلیمانی وفد کے ہمراہ متحدہ عرب امارات کا چار روزہ دورہ طے تھا، انہیں گزشتہ رات تین بجے یو اے ای کے لئے روانہ ہونا تھا۔ اپنا دورہ منسوخ کرنے کے حوالے سے صادق سنجرانی کا کہنا ہے کہ انہوں نے اپنے فیصلے سے یو اے ای کے سفیر کو آگاہ کر دیا ہے۔