لاہور ہائی کورٹ نے قصور میں عدلیہ مخالف ریلی نکالنے پر سابق لیگی ایم این اے شیخ وسیم سمیت 4 ملزموں کو ایک ماہ کی سزا سناتے ہوئے انہیں پانچ سال کے لئے نا اہل بھی قرار دےدیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی پر مشتمل تین رکنی بینچ نے محفوظ فیصلہ سنایا، جس میں سابق (ن) لیگی ایم این اے شیخ وسیم سمیت چار ملزمان کو سزا سناتے ہوئے ملزمان کو ایک ماہ قید اور ایک لاکھ روپے جرمانہ بھی عائد کیا گیا ہے،عدالتی حکم کے بعد ملزمان کو گرفتار کرلیا گیا۔

ثبوت کی عدم فراہمی پر لاہورہائیکورٹ نے سابق ایم پی اے نعیم صفدر اور سابق چیئرمین بلدیہ قصور حاجی ایاز کو بری کرنے کے احکامات بھی جاری کئے

تیرہ اپریل دوہزار اٹھارہ کو قصور شہر میں مقامی ایم این اے شیخ وسیم اختر کی زیر قیادت نکالی جانے والی ریلی میں اداروں کے خلاف ہرزہ سرائی کی گئی، ریلی کے شرکا کی جانب سے چیف جسٹس آف پاکستان اور آرمی چیف سمیت اداروں کے خلاف بھی انتہائی بازاری زبان استعمال کی گئی تھی

ناصر محمود چیئرمین بیت المال قصور اور جمیل احمد چیئرمین مارکیٹ کمیٹی قصور نے بھی حکومتی اداروں کے خلاف سخت تنقید کی،جس کا آئی جی پنجاب نے سخت نوٹس لیا اور آئی جی پنجاب کے حکم پر مقامی ایم این اے اور ایم پی اے سمیت (ن) لیگی کارکنان کے خلاف دو علیحدہ علیحدہ مقدمات درج کئے گئے۔ ڈی پی او کا کہنا تھا کہ کسی شخص کو اداروں کے خلاف ہرزہ سرائی کر کے امن وامان کی صورتحال میں بگاڑ پیدا کرنے کی اجازت نہیں دی جائیگی