پاکستان تحریک انصاف نے سینیٹ الیکشن میں ووٹ بیچنے والے 20 اراکین کیخلاف کارروائی کا اعلان کردیا، عمران خان نے پریس کانفرنس میں تمام ارکان کے نام بھی بتادیئے، کہتے ہیں پہلے مرحلے میں ان سب لوگوں کو شوکاز نوٹس جاری کریں گے، اس کے بعد نیب اور الیکشن کمیشن سے بھی رجوع کیا جائے گا

اسلام آباد میں پارٹی رہنماؤں کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان نے کہا کہ سینیٹ ملک کا اہم ترین ادارہ ہے، 30، 40 سال سے سینیٹ الیکشن میں ووٹ بک رہا ہے۔

سینیٹ الیکشن 2018ء میں خیبرپختونخوا کی 11 نشستوں پر پولنگ ہوئی جس میں سے پاکستان تحریک انصاف کو 5، پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمنٹیرین کو 2، 2 آزاد، جمعیت علمائے اسلام اور جماعت اسلامی نے ایک ایک نشست حاصل کی تھی

عمران خان نے سینیٹ انتخابات میں ووٹ بیچنے والے اپنے 20 ارکان کے نام بھی بتادیئے، بولے کہ نرگس علی، دینا ناز، نگینہ خان، فوزیہ بی بی، نسیم حیات، امجد آفریدی، عارف یوسف، یاسین خلیل، قیصر زمان، سردار ادریس، عبید اللہ مائیر، زاہد درانی، عبدالحق، وجیہ الزماں، جاوید نسیم، فیصل زمان، معراج ہمایوں، بابر سلیم قربان خان، خاتون بی بی اور سمیع اللہ علیزئی نے اپنا ووٹ بیچا۔

چیئرمین پی ٹی آئی نے تمام اراکین کیخلاف کارروائی کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ سب کو شوکاز نوٹس جاری کئے جائیں گے، اگر وضاحت نہ دی تو ان تمام افراد کو پارٹی سے نکال دیں گے، ساتھ ہی تمام نام نیب کو دے رہے ہیں تاکہ ان کے اکاؤنٹس چیک کئے جائیں