شہرقائد کے مختلف علاقوں میں گیس بحران سنگین ہوگیا، گھروں کے چولہے ٹھنڈے پڑگئے۔

تفصیلات کے مطابق کراچی کے مختلف علاقوں میں گیس بحران کے باعث شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے، گھروں میں چولہے ٹھنڈے پڑ ے ہیں۔

گیس پریشر صفر ہونے کے باعث اولڈ سٹی ایریا سمیت دیگر علاقوں کے مکین پریشانی میں مبتلا ہیں، شہریوں نے مطالبہ کیا ہے کہ انتظامیہ فوری طور پر اس بحران کا حل نکالنے۔

ایس ایس جی سی نے گیس میں کمی پر گزشتہ شب سی این جی اسٹیشنز بھی بند کر دئیے تھے، کورنگی، سائٹ اور سپر ہائی وے کی صنعتوں کو بھی گیس کی فراہمی نہ ہونے کے برابر ہے۔

پریشر نہ ہونے کی وجہ سے فیکٹریوں میں کام ٹھپ ہو کر رہ گیا، فیکٹریوں میں روزانہ کی بنیاد پر اجرت حاصل کرنے والے ملازمین ہاتھ پر ہاتھ دہرے بیٹھے ہیں۔

خیال رہے کہ گذشتہ ہفتے وفاقی وزیراطلاعات فواد چوہدری نے گیس بحران کا ذمہ دار مسلم لیگ ن کو قرار دیا تھا۔

فواد چوہدری کی وزیرِ اعظم کے خلاف نیب کیس پر تنقید، گیس بحران کا ذمہ دار ن لیگ قرار دیا۔

گیس بحران پر وفاقی وزیر اطلاعات نے کہا تھا کہ 2013 میں گیس پر کوئی بھی قرضہ نہیں تھا، شاہد خاقان آئے تو گیس پر قرضہ چڑھ گیا، اب حال یہ ہے کہ سالانہ 57 ارب گیس چوری کا سامنا ہے، محمد زبیر شاہد خاقان عباسی سے پوچھیں کہ گیس کیوں نہیں آرہی؟

واضح رہے کہ کراچی میں گیس بحران دو ہفتے سے زائد عرصے سے جاری ہے، جس کے بارے میں گزشتہ دنوں انکشاف ہوا تھا کہ یہ مصنوعی بحران ہے، گمبٹ گیس فیلڈ کی خرابی کی خبر غلط تھی اور سندھ کی گیس پنجاب کو فراہم کی جا رہی ہے