خیبرپختونخوا حکومت نے اپنےاعلان سے پیچھے ہٹتے ہوئے صوبائی بجٹ پیش کرنے کا فیصلہ کرلیا۔

چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان کے اعلان کے برعکس صوبائی حکومت نے بجٹ پیش کرنے کا فیصلہ کرلیا۔عمران خان کا کہنا تھا کہ نئی آنے والی حکومت اپنی ترجیحات کے مطابق بجٹ پیش کرے گی اور یہ اس کا حق بنتا ہے۔

ترجمان وزیراعلیٰ خیبرپختونخواشوکت یوسفزئی کے مطابق صوبائی حکومت نے بجٹ پیش کرنے کا فیصلہ ترقیاتی کاموں کوجاری رکھنےکیلئے کیاہے۔ فیصلے سے پارٹی چیئرمین عمران خان کو آگاہ کردیا گیا ہے شوکت یوسفزئی کے مطابق اپوزیشن کے ساتھ اجلاس بلا کر نئے مالی سال کا بجٹ پیش کرنے سے متعلق حتمی فیصلہ کیا جائے گا اور ممکنہ ممکنہ طور پر 14 مئی کو بجٹ پیش کیا جائے گا

غالب امکان ہے کہ آئندہ چند روز میں کے پی حکومت کی جانب سے بجٹ تجاویز سامنے آجائیں گی۔ کے پی حکومت اپنا پانچواں بجٹ پیش کرے گی، گزشتہ سال جون میں صوبائی بجٹ 603 ارب روپے تھا۔ وفاقی حکومت کی جانب سے 27 اپریل کو بجٹ پیش کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جبکہ حکومت کی مدت 31 مئی کو ختم ہو رہی ہے

۔