پی ٹی آئی رہنما نے جاوید بدر نے وزیراعلٰی پنجاب عثمان بزدار پر تنقید کے نشتر چلاتے ہوئے آموں کا حساب مانگ لیا، کہتے ہیں خان صاحب نے بولا تھا کہ جناب کے گھر بجلی تک نہیں پھر وہ حکومتئ عہدیداروں اور ٹی وی اینکرز کو لاکھوں روپے کے آم کس کی جیب سے بھیج رہے ہیں۔ جاوید بدر کا کہنا ہے کہ عثمان بزدار اپنے آپ کو عام آدمی کہلاتے ہیں تو تحائف پر لاکھوں روپے کس طرح خرچ کر سکتے ہیں۔ لگتا ہے پی ٹی آئی پنجاب کی حکومت بھی ن لیگ کے نقش قدم پر چل نکلی ہے،اگر آم حکومتی خرچے پر بھیجے جا رہے ہیں تو بزدار پی ٹی آئی کے خیرخواہ نہیں ہو سکتے۔

 

جاوید بدر نے پنجاب حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ موجودہ حکومت کا چہرہ پی ٹی آئی کا ہے لیکن کرتوت سابقہ حکومتوں والے ہیں۔ وزیراعظم عمران خان خالی خزانہ بھرنے میں مصروف ہیں جبکہ بزدار صاحب لاکھوں کے تحائف بھیج رہے ہیں، انہیں یہ ثابت کرنا ہوگا کہ مہنگے تحائف بھیجنے کی ضرورت کیوں محسوس کی گئی اور اس خرچے کا حساب بھی دینا ہوگا۔

 

 

واضح رہے وزیراعلٰی پنجاب عثمان بزدار کی جانب سے بعض ٹی وی اینکرز، وزرا اور مختلف محکموں کے سربراہان کو لاکھوں کے تحائف آموں کی پیٹیوں کی صورت میں  بھجوائے گئے ہیں۔ اینکرز میں اے آر وائی کے ارشد شریف، ماریہ میمن، کاشف عباسی، صابر شاکر اور عادل عباسی کے نام شامل ہیں جبکہ وفاقی وزرا میں زبیدہ جلال، چوہدری غلام سرور، شفقت محمود، خالد مقبول صدیقی شامل ہیں۔ جن محکموں کے سربراہان کو آموں کی پیٹیاں بھجوائی گئی ہیں ان میں اٹارنی جنرل آف پاکستان، ڈی جی ایف  آئی اے، ڈی جی آئی بی، چئیرمین ایف بی آر شامل ہیں۔