بلوکی : وزیر اعظم عمران خان نے دو ٹوک اعلان کرتے ہوئے کہا کسی کو این آر او نہیں ملے گا ، این آر او بڑے مجرموں کومعاف کرنا ہے، اگر ہم این آر او دیں گے تو  ملک سے غداری کریں گے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے بلوکی میں بہار شجر کاری مہم کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا ملک میں زمینوں پرقبضےچھڑاکرزیادہ سےزیادہ جنگلات اگانےہیں ، پاکستان دنیا میں 8ویں نمبر پر ہے، جس کا موسم گرم ہوتاجارہاہے، خشک سالی آئے گی، رہنا مشکل ہوجائےگا، ملک میں سب سےکم جنگلات ہیں۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ، نوجوانوں کے مستقبل کاسوال ہے، افسوس سےکہتاہوں جنگلات کو تباہ ہوتے دیکھا، دنیامیں سب سے زیادہ آلودگی لاہور اور راولپنڈی میں ہے، چھانگامانگا جاکر دیکھیں کتنےدرخت بچےہیں، میانوالی میں جنگل ختم کردیا گیا، جنگلات کاٹ کاٹ کر  زمینوں پر قبضے کیے گئے۔


عمران  خان نے کہا  مشرف نے اپنے کرسی بچانے کے لئے نوازشریف کواین آر اودیا ،  سوئٹرزلینڈ میں قوم کے 2  ارب خرچ ہوئے، وہ  بھی این آراو کرکے چھوڑ دیا گیا، اپنی کرسی بچانےکے لئے این آراوکیےگئے، 6 ہزار ارب سے پاکستان کا قرضہ30 ہزار ارب پر چلا گیا۔

ان کا کہنا تھا پاکستان میں بڑے بڑےچوروں کو کوئی نہیں پکڑتا،جنہوں نےملک کو مقروض کیاوہ کس منہ سےہماری کارکردگی کاپوچھتے ہیں۔

وزیراعظم نے دو ٹوک الفاظ میں کہا کسی کو این آر او نہیں ملے گا، اگرہم این آر اودیں گے تو ملک سے غداری کریں گے، ملک سےغداری کرنے والےکسی شخص کو نہیں چھوڑیں گے، مشرف کے زمانے میں این آر او میں امریکی بھی شامل تھے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ این آراوکی وجہ سے سب نے سمجھا جتنی چوری کرو کچھ نہیں ہوگا، این آر او سے خوف ختم ہوگیاجتنی چوری کرو سب معاف ہوجائے گا۔